پیارے نبی صلی اللہ تعالیٰ علیہ وآلہ وسلم کے فرمان کے مطابق صبح 100 بار وَحدَہ لاَ شَرَیکَ لَہُ پڑھنےکے معجزاتStormy Predictions

پیارے نبی صلی اللہ تعالیٰ علیہ وآلہ وسلم کے فرمان کے مطابق صبح 100 بار وَحدَہ لاَ شَرَیکَ لَہُ پڑھنےکے معجزات

پیارے نبی صلی اللہ تعالیٰ علیہ وآلہ وسلم کے فرمان کے مطابق صبح 100 بار وَحدَہ لاَ شَرَیکَ لَہُ پڑھنےکے معجزات

توحید اسلام کی جان ہے اسلام کی روح ہے توحید ہی کے لئے اللہ رب العزت نے اس کائنات کو پیدا فرمایا ہے جیسا کہ اللہ رب العزت نے سورہ ذاریات میں ارشاد فرمایا ہے اور نہیں پیدا کیا میں نے جنوں اور انسانوں کو مگر اس لئے کہ وہ صرف میری ہی عبادت کریں یعنی ہماری تخلیق کا مقصد کیا ہے ہم فقط اللہ رب العزت کی ہی عبادت کریں

خالص توحید ہی کی وجہ سے یہ آسمان اور زمین قائم ہے توحید ہی وہ پہلی چیز ہے جس کی وجہ سے اللہ رب العزت لوگوں کے اعمال قبول فرماتا ہے اور جنت میں بھی وہی جائے گا جس کی موت توحید خالص پر آئی جیسا کہ صحیح مسلم کے اندر حدیث پاک ہے اللہ کے رسول صلی اللہ تعالیٰ علیہ وآلہ وسلم نے ارشاد فرمایا جو شخص اس حال میں مرا کہ اس کو لا الہ الا اللہ کا علم ہو تو وہ جنت میں جائے گا تو حید ہی کے لئے اللہ رب العزت نے تمام نبیوں کو بھیجا جیسا کہ سورہ انبیاء آیت نمبر 25 ۔یہ تو اللہ کی توحید ہے اور آپ کو معلوم ہے کہ توحید کا کلمہ کیا ہےلا الہ الا اللہ وحدہ لا شریک لہ اس کا مطلب ہے میں رب تعالیٰ کی ایسی تسبیح کرتا ہوں جو تمام مخلوق کے برابر ہو اس کی رضا کا باعث ہوں

اس کے عرش کی زینت ہو اور کلمات الٰہیہ کی جو روشنائی ہے ان کے برابر ہو ان جامع الفاظ میں ساری چیزیں آ گئیں کوئی چیز باقی نہ رہی لہٰذا یہ جامع وظیفہ ہے اس لئے اس کا اجر بھی زیادہ ہے کلمہ توحید لا الہ الا اللہ دو ارکان پر مشتمل ہے اور توحید کے اثبات کے لئے ان دونوں کا ہونا ضروری ہے اور یہ دونوں ارکان نفی اور اثبات ہیں جمیع معبودات کی نفی ہے اور لا الہ الا اللہ میں بندگی کو محض اللہ کے لئے ثبات کیا گیاہے روایت ہے کہ حضرت ابو ہریرہ رضی اللہ تعالیٰ عنہ فرماتے ہیں فرمایا رسول اللہ صلی اللہ تعالیٰ علیہ وآلہ وسلم نے جو ایک دن میں سو بار یہ کہہ لے اللہ کے اکیلے کے سوا کوئی معبود نہیں اس کا کوئی شریک نہیں اسی کا ملک ہے اسی کی تعریف ہے وہ ہر چیز پر قادر ہے اس کے لئے دس غلام آزاد کرنے کے برابر ہو گااور

اس کے لئے سو نیکیاں لکھی جائیں گے اور اس کے سو گناہ معاف کیئے جائیں گے اور اس دن اس کی شیطان سے حفاظت ہوگی حتی کہ شام پا لے اور کوئی شخص اس سے بہتر افضل عمل نہ کرسکے گا اس کے سوا جو اس سے زیادہ یہ پڑھ لے اس سے اشارۃ معلوم ہورہا ہے کہ اگر بندہ رات میں یہ پڑھ لیا کرے تو صبح تک شیطان سے محفوظ رہے مگر چونکہ بندہ دن میں جاگتا ہے اور جاگتے ہی میں شیطان زیادہ گناہ کراتا ہے اس لئے دن کا ذکر فرمایا اگر چہ یہ کلمات ایک دم یا علیحدہ علیحدہ ہر وقت پڑھنا درست ہے لیکن صبح کے وقت ایک دم پڑھنا افضل ہے تا کہ دن بھر شیطان سے محفوظ رہے۔اللہ ہم سب کا حامی وناصر ہو۔آمین

Sharing is caring!

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *